حوزہ علمیہ مکتبۃ الزہراء حسن آباد کے زیر اہتمام حجاب کی پابندی کے خلاف پُرامن مظاہرے، حجاب کو عورت کے لیئے سب سے اہم دینی فریضہ قرار دیا

(سرینگر) انجمن شرعی شیعیان کے زیر سرپرستی حوزہ علمیہ مکتبۃ الزہراء حسن آباد کے اہتمام سے آج سرینگر میں حجاب کی پابندی کے خلاف پُرامن مظاہرے ہوئے جس میں مکتبۃ الزہراء سے وابستہ معلمات اور طالبات نے حجاب کی افادیت کو آشکار کرتے ہوئے کہا کہ حجاب مسلمان عورت کے لیے ایک ایسا فریضہ ہے جو وہ احکامِ الہیٰ کے تحت ادا کرتی ہے، پردہ عورت کی زینت ہے، شرم و حیا اس کا زیور ہے اور اس زیور کی حفاظت پردے کے ذریعے ہی ممکن ہے۔

مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے معلمات اور طالبات نے کہا کہ حجاب اُمت مسلمہ کا وہ شعار، مسلم خواتین کا وہ فخر و امتیاز جو اسلامی معاشرے کو پاکیزگی عطا کرنے کا ایک ذریعہ تھا (اور ہے) استعمار کا سالہا سال کی سازشوں کے نتیجے میں آج بھرپور حملوں کی زد میں ہے، مسلم دنیا کو پاکیزگی سے ہٹا کر بے حیائی کی دلدل میں دھکیلنا اور عورت کو ترقی کے نام پر بے حجاب کرنا شیطانی قوتوں کا ہمیشہ سے ہدف رہا ہے۔
حوزہ علمیہ مکتبۃ الزھرا کی اس بہترین اور پُر امن ریلی کی سراہنا کرتے ہوئے صدر انجمن شرعی شیعیان حجۃ الاسلام والمسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے کہا کہ ایسے مظاہرے وقت کی اہم ضرورت ہے کیونکہ پردہ نہ صرف اسلامی کلچر کا حصہ ہے بلکہ اسلام کے ارکان میں سے ایک اہم رکن ہے اس پر پابندی عائد کرنا مداخلت فی الدین کے مترادف ہے جو ہرگز برداشت نہیں کی جائے گی۔

آغا سید حسن نے مزید کہا کہ انسان کی فطرت میں اللہ تعالی نے حیا کا مادہ رکھا ہے انسان مرد ہو یا عورت اپنے جسم کے کچھ حصوں کو دوسروں سے چھپانا چاہتاہے اور لوگوں کے سامنے ان کا ظاہر ہونا اسے گوارا نہیں ہوتا انسان کی فطرت اور اس کی وہ خصوصیت ہے جو دوسرے حیوانات سے اسے ممتاز کرتی ہے۔

آغا صاحب نے پردے کو دین اسلام کا اہم جزء قرار دیتے ہوئے کہا کہ عورتوں کے پردے کا بیان قرآن پاک کی سات آیات میں آیا ہے اور ستر سے زیادہ احادیث میں قولاً وعملاً پردے کے احکام بتائے گئے ہیں، اتنی کثرت سے پردہ کے بارے میں احادیث کا وارد ہونا اس کی اہمیت پر بین دلیل ہے اور ایسی عورتوں پر لعنت کی گئی ہے کہ جو لباس پہن کر بھی ننگی رہتی ہیں اور پیارے نبیﷺ کے فرمان کے مطابق وہ جنت کی خوشبو بھی نہ پاسکیں گی، حالانکہ جنت کی خوشبو کئی ہزار میل دور سے آتی ہوگی، چادر اور چار دیواری تو عورت کے تحفظ کے عنوان ہیں اور عورت کا تحفظ، خاندان کے استحکام، نئی نسلوں کی تربیت کے انتظام اور معاشرتی استحکام کا ضامن ہے۔

https://fb.watch/c2P-1QVCBR/

https://www.facebook.com/129979143698343/posts/5542654499097420/

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔