عالمی طاقتوں کے ساتھ ایران کا جوہری معاہدہ انقلاب دشمن قوتوں کی شکست

سرینگر/15جولائی2015/ دنیا کی 6 عالمی طاقتوں کے ساتھ اسلامی جمہوریہ ایران کے جوہری معاہدے کو ایران کی واضح کامیابی اور انقلاب اسلامی ایران کے دیرینہ دشمنوں کی شکست قرار دیتے ہوئے انجمن شرعی شیعیان کے سربراہ حجۃ الاسلام والمسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے کہا اس تاریخی معاہدے سے عالمی برادری کے ساتھ ایران کے تعلقات کا ایک نئے با ب کا آغاز ہوگا اور ایران کی معیشت اور اقتصادیات کامیابیوں کی نئی منزلیں طے کرے گی جس کے مثبت اثرات پوری دنیا پر مرتب ہونگے۔ آغا صاحب نے کہا کہ ایران پر ایٹمی ہتھیار تیار کرنے کے بے بنیاد الزام لگاکر اسرائیل اور دیگر انقلاب دشمن قوتیں ایران کو طویل مدت تک اقتصادی پابندیوں کے شکنجے میں جکڑے رکھنے کی سرتوڑ کوششیں کررہی تھی تاکہ ایرانی قوم کو انقلاب اسلامی اور دینی قیادت سے متنفر کیا جائے ۔ جوہری معاہدے کا طے پانا ان طاقتوں کی رسوا کن شکست ہے۔ انہوں نے کہا کہ رہبر معظم حضرت امام خامنہ ای نے ابتدا سے ہی غیر مبہم الفاظ میں واضح کیا تھا کہ ایٹمی ہتھیار بنانا ایک فعل حرام ہے۔ بالآخر عالمی طاقتوں نے رہبر معظم کے اس ایمانی موقف پر یقین کا مظاہرہ کیا اور یہ تاریخی معاہدہ عمل میں آیا۔ آغا صاحب نے روس میں ہند پاک وزرائے اعظم کی حالیہ ملاقات اور مشترکہ اعلامیہ میں تنازعہ کشمیر پر مکمل خاموشی سے کشمیری محکوم عوام میں پیدا شدہ ناراضگی کو حق بجانب قرار دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی سیاسی ، سفارتی اور اخلاقی حمایت کے بغیر ہماری تحریک آزادی کا کوئی مستقبل نہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اپنے قیام سے ہی کشمیریوں کی برحق تحریک کی حمایت کرتا چلا آیا ہے اور اس سلسلے میں کئی بار اپنے وجود کو بھی داو پر لگا چکا ہے۔ ہند پاک سربراہان مملکت کی کسی بھی ملاقات اور مذاکراتی عمل میں تنازعہ کشمیر کو طاق نسیان پر رکھنا نہ صرف کشمیریوں کے توقعات بلکہ پاکستان کے اصولی موقف کے بھی منافی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔