شیعہ سنی کارڈی نیشن کمیٹی کا خصوصی اجلاس آغا حسن کی صدارت میں منعقد

سرینگر/ 15اکتوبر2015/شیعہ سنی کارڈی نیشن کمیٹی کا خصوصی محرم اجلاس حسب عمل قدیم اوقاف بلڈنگ گاسی یار جڈی بل سرینگر میں انجمن شرعی شیعیان کے سربراہ اور حریت کانفرنس کے سینٔر رہنماحجۃا لاسلام والمسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی کی صدارت میں منعقد ہوا ۔ اجلاس میں ریاست کی متعدد نمایندہ دینی ، سیاسی تنظیموں اور سماجی ، فلاحی اور رضاکار انجمنوں کے قائدین ، نمائندگان اور سرکردہ اراکین نے شرکت کی۔ محرم تقریبات کے پُرامن انعقاد اور ریاست میں ملی اتحاد کے دائمی تحفظ و ترویج کے حوالے سے جن معززین نے اپنے زرین خیالات کا اظہار کیا ان میں انجمن شرعی شیعیان کے سربراہ آغا سید حسن الموسوی ، حریت کانفرنس کے چیرمین اور تحریک حریت کے سربراہ جناب سید علی شاہ گیلانی کے نمایندہ الطاف احمد شاہ، جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے سربراہ ملک محمد یاسین کے نمایندگان شیخ عبدالرشیداور نور محمد کلوال،انجمن حمایت الاسلام کے صدر مولانا خورشید احمد قانون گو،جموں کشمیر نیشنل فرنٹ چیرمین نعیم احمد خان، ڈیموکریٹک فریڈم پارٹی کے چیرمین شبیر احمد شاہ کے نمایندہ انجینٔر فاروق احمد ، نیشنل پیپلز پارٹی کے چیرمین سید سلیم گیلانی وغیرہ شامل ہیں۔ جب کہ اجلاس میں جماعت اسلامی کے ترجمان ایڈوکیٹ زاہد علی بھی شامل تھے۔اجلاس کی نظامت کے فرائض حکیم عبدالرشید نے انجام دئے۔مقررین نے حماسہ حسینیؑ کو ظلم و باطل کے خلاف حق پرستوں کی مزاحمت کا مکتب اتحاد اور لائحہ عمل قرار دیتے ہوئے کہا کہ امام عالیمقامؑ کا کردار وعمل حریت خواہ اقوام کیلئے سرمایہ نجات کی حیثیت رکھتا ہے۔ محرم الحرام جبر تسلط اور اسلام و مسلمین کے خلاف نبردآزما دشمن قوتوں کے مکروہ عزائم کے خلاف عزم و استقامت کا تجدید عہد ہے۔ اس حوالے سے محرم تقریبات کی اہمیت و افادیت ایک مسلمہ حقیقت ہے۔اجلا س میں کہا گیا کہ کشمیری عوام کے تحریکی عزم و حوصلے کو توڑنے کیلئے جہاں ظلم وتشدد اور حقوق انسانی کی پامالیوںکی ایک سیاہ تاریخ رقم کی گئی وہیں تحریک کا رخ موڑنے کیلئے مسلکی منافرت کی آگ بھڑکانے کی بھی ہر ممکن کوشش کی گئی۔اس حوالے سے عشرہ محرم کے دوران بے بنیاد افواہیں پھیلاکر اور کچھ زرخرید ایجنٹوں کی خدمات لیکر یہاں اتحاد اور بھائی چارے میں رخنہ ڈالنے کی کوشش کی گئی۔ اجلاس میں کہا گیا کہ ریاست کی حساس سیاسی صورتحال کے تناظر میں تمام دینی و سیاسی جماعتوں کا یہ منصبی فریضہ ہے کہ وہ اتحاد و بھائی چارے میں رخنہ ڈالنے والے عناصر اور ایجنسیوں کے عزائم کو ناکام بنانے کیلئے متحد ہوجائیں۔اسی ناگزیر ملی ذمہ داری کے پیش نظر 2008 میں شیعہ سنی کارڈی نیشن کمیٹی کا قیام عمل میں لایا گیا جو گزشتہ 8 سال سے محرم تقریبات کے پُر امن انعقاد اور اتحاد ملی کی حفاظت کیلئے اپنا موثر کردار ادا کررہی ہے۔ اجلاس میں متفقہ طور پر ایک قرارداد پاس کی گئی جس کی تمام شرکائے اجلاس نے بھر پور تائید کی۔ قرارداد میں کہا گیا کہ ہمارے اتحاد کی بنیاد کلمہ طیبہ ہے اور اس بنیاد کو کمزور کرنے والے عناصر کے خلاف یہ اجلاس متحد ہوکر مزاحمت کا وعدہ بند ہے۔ قرارداد میں ملت اسلامیہ جموں کشمیر سے اپیل کی گئی کہ وہ عملاً اتحاد و اخوت اسلامی کا مظاہرہ کریں اور ایام محرم کے دوران مشترکہ طور مجالس کا اہتمام کریں۔ قرار داد میں تمام مسلمانان ریاست بالخصوص خطیب و واعظین اور اہل قلم حضرات سے مخلصانہ اپیل کی گئی کہ ایام محرم میںتحاریر و تقاریر ، اشتہارات اور بینر وغیرہ میں ایسے الفاظ یا جملوں سے اجتناب کریں جو اخوت اسلامی کی روح کے منافی ہوں۔ قرارداد میں محرم کے روایتی جلوسوں پر قدغن کی پُرزور مذمت کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا گیا کہ بلا جواز حکومتی پابندیوں کے باوجود جلوس ہائے عزاداری روایتی انداز سے برآمد کئے جائیں گے۔اپنے صدارتی خطاب میں انجمن شرعی شیعیان کے سربراہ حجۃ الاسلام والمسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے شیعہ سنی کارڈی نیشن کمیٹی کے 8 سالہ خدمات کو وادی میں شیعہ سنی اتحاد کا ایک سنگ میل قرار دیتے ہوئے تمام شرکائے اجلاس کا پُرخلوص شکریہ ادا کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔