حریت چیرمین سید علی گیلانی کے پاسپورٹ کی ضبطی پر آغا سید حسن کا شدید ردعمل

سرینگر/ 23ستمبر2015/جموں کشمیر انجمن شرعی شیعیان کے سربراہ آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیرمین سید علی شاہ گیلانی کے پاسپورٹ کی ضبطی پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے حکومت ہند کی اس کاروائی کو انسانی حقوق اور جمہوریت کے ساتھ بھونڈا مذاق قرار دیا ہے۔ آغا صاحب نے کہا کہ گیلانی صاحب کو پاسپورٹ اجرا کرنے میں حکومت ہند پہلے ہی مخلص نہیں تھی عالمی سطح پر اپنی بگڑی ساکھ اور خفت کو مٹانے کیلئے گیلانی صاحب کو بادل ناخواستہ اس نیت کے ساتھ پاسپورٹ اجرا کیا گیا کہ عین وقت پر کوئی نہ کوئی بہانہ تراش کر بزرگ قائد کو پاسپورٹ سے استفادہ حاصل کرنے کا موقعہ نہ دیا جائے۔ حکومت ہند کی موجودہ کاروائی اسی حقیقت کی عکاس ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کاروائی سے یہ حقیقت اور بھی عیاں ہوگئی ہے کہ حریت پسند کشمیریوں بالخصوص حریت قیادت کے معاملے میں بھارت انسانی بنیادوں پر بھی کوئی رعایت دینے کیلئے تیار نہیں۔ آغا صاحب نے لبریشن فرنٹ سربراہ محمد یاسین ملک اور دختران ملت کی چیر پرسن سیدہ آسیہ اندرابی کی بلاوجہ گرفتاری اور ان کی پْرامن سیاسی سرگرمیوں پر قدغن کی پْرزور الفاظ میں مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ مزاحمتی قیادت کو ہراساں کرنے سے کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو متزلزل نہیں کیا جاسکتا اور نہ قیادت کو قوم کی خواہشات کی ترجمانی سے روکا جاسکتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔