انجمن شرعی شیعیان کے مرکزی اراکین کا اجلاس، سیاسی صورتحال پر بحث

سرینگر/9اگست/ جموں کشمیر انجمن شرعی شیعیان کے مرکزی اراکین (Central Body ) کا ایک خصوصی اجلاس تنظیم کے سربراہ آغا سید حسن الموسوی الصفوی کی صدارت میں صدر دفتر بڈگام پر منعقد ہوا۔ اجلاس میں تازہ ترین سیاسی و تحریکی صورتحال کو زیر بحث لایا گیا اور اس عزم کا اعادہ کیا گیا کہ تنظیم رواں جدوجہد کے منطقی انجام تک اپنی تحریکی ذمہ داریاں پورا کرنے میں کوئی بھی دقیقہ فروگزاشت نہیں کرے گی اور تنظیم بدلتی سیاسی صورتحال اور تحریک کی تقاضوںکے مطابق حکمت عملی مرتب کرکے شہدا کے نصب العین کی آبیاری کرتی رہے گی۔ اجلاس میں اراکین و عاملین نے مفصل طور پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے اس عہد کی تجدید کی کہ تنظیم مس 191لہ کشمیر کے منصفانہ اور قابل قبول حل تک برادر حریت نواز تنظیموں کے ساتھ شانہ بہ شانہ مصروف جدو جہد رہے گی۔اجلا س میں تنازعہ کشمیر کے حوالے سے تنظیم کے اس دیرینہ موقف کی تجدید کی گئی کہ مس 191لہ کشمیر بنیادی طورپر تقسیم برصغیرکا نامکمل ایجنڈا ہے جس کی تکمیل کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کی قراردادوں کی عمل آوری میں مضمر ہے اور موجودہ پیچیدہ صورتحال نے سہ فریقی مذاکرات سے بہتر اور کوئی رائے حل نہیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے تنظیم کے سربراہ آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے شہید عزیمت شیخ عبدالعزیز اور دیگر شہدائے اوڑی کو ان کی برسی پر شاندار خراج عقیدت پیش کیا ۔آغا صاحب نے رواں تحریک کیلئے شہید عزیمت کی عسکری اور سیاسی خدمات کو شاندار خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ موصوف کی جدائی نہ صرف حریت کانفرنس بلکہ تحریک کیلئے ایک ناقابل تلافی نقصان ثابت ہوی اور ان کی شہادت سے جو خلا پیدا ہوا وہ ابھی تک پُر نہیں ہوسکا۔ اجلاس میں حکومت ہند پر واضح کیا گیا کہ ان کے کشمیر دشمن منصوبوں ، ریاست کے مسلم اکثریتی کردار کو نقصان پہنچانے کی سازشوں اور ریاست کی جگرافیائی وحدت کو پارہ پارہ کرنے کی کسی بھی کوشش کا کشمیری عوام ڈٹ کر مقابلہ کریں گے اور ایسے حربوں سے بھارت مس 191لہ کشمیر سے دامن نہیں چھڑاسکتا۔

7 thoughts on “انجمن شرعی شیعیان کے مرکزی اراکین کا اجلاس، سیاسی صورتحال پر بحث

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔