انجمن شرعی شیعیان کی جانب سے ایرانی انقلاب کی تینتالیسویں سالگرہ کی مناسبت سے عظیم الشان سیمینار کا انعقاد

(بڈگام) جموں و کشمیر انجمن شرعی شیعیان کی جانب سے جمہوری اسلامی ایران کے انقلاب کی 43ویں سالگرہ کی منسابت سے حوزہ علمیہ جامعہ باب العلم میرگنڈ بڈگام میں ایک عظیم الشان سیمینار کا اہتمام کیا گیا جس میں شیعہ و سنی برداری کے متعدد افراد نے شرکت کی۔

"اسلامی انقلاب اور ہم” کے عنوان سے منعقد ہونے والے سیمینار میں علماء کرام، مقررین اور شعراء کرام نے بہترین انداز میں امام خمینی رضوان اللہ تعالیٰ علیہ کو ایک عظیم مرد مجاہد قرار دیتے ہوئے انہیں ایک فولادی اور اس صدی کی سب سے بڑی شخصیت قرار دیا۔

مقررین نے اس انقلاب کو ایک الٰہی اور جہانی قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ انقلاب صرف ایک ایرانی یا شیعی انقلاب نہیں تھا بلکہ  یہ انقلاب ایک الہیٰ اور کربلائی انقلاب تھا، جس نے دنیا بھر کے تمام مظلوموں و مستضعفوں، خواہ وہ کسی بھی مسلک یا ملت سے تعلق رکھتے ہوں، میں امید کی ایک کرن پیدا کی اور ظلم کے کاشانوں کو ہلاکر رکھ دیا۔

مقررین نے اس انقلاب کو دنیا کا سب سے کامیاب انقلاب قرار دیتے ہوئے کہا کہ آج 43 سال گزر جانے کے باوجود بھی یہ انقلاب بڑی آب و تاب کے ساتھ ترقی کی منازل طے کر رہا ہے اور دنیا کے کونے کونے میں اس انقلاب کی کرنیں پھوٹ پڑی ہیں اور بقول امام خمینی رضوان اللہ تعالیٰ اسلامی انقلاب ایک روشنی کا دھماکہ تھا جس کی کرنیں آج پوری دنیا میں پھیل رہی ہیں۔

مقررین نے اس عظیم انقلاب کے بانی امام خمینی رضوان اللہ تعالیٰ کو اتحاد اور بھائی چارے کا علمبردار قرار دیتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ موجودہ حالات میں پوری مسلم امہ کو اتحاد کی ضرورت ہے اور موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے ہم سب کے لیئے ضروری ہیکہ آپسی اتحاد اور بھائی چارے کو حفظ کریں تاکہ اسلام مخالف طاقتوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جاسکے۔

قابل ذکر ہیکہ اس سیمینار کی صدارت، حجۃ الاسلام والمسلمین آغا سید مجتبیٰ الموسوی الصفوی نے کی اور انہوں نے رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمیٰ خامنہ ای مدظلہ العالی اور پوری ایرانی قوم کو انقلاب کی تینتالیسویں سالگرہ کی مناسبت سے مبارکباد پیش کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔